اسلام آباد ( ) وزیراعظم کے مشیر برائے قومی تاریخ وادبی ورثہ عرفان صدیقی مری ایکسپریس وے پر واقع زیابیطس مرکز میں جدید ترین مشینری سے آراستہ لیبارٹری کے افتتاح کے بعد میڈیا سے گفتگوکررہے تھے۔ انہوں نے زیابیطس مرکز میں علاج معالجے اور جدید ترین مشینری وسہولیات کی فراہمی کو سراہتے ہوئے کہاکہ پاکستان میں یہ موذی مرض بڑی تیزی سے بڑھ رہا ہے جو ’الارمنگ‘ ہے۔ ا سکی تشخیص اور علاج کے لئے ’سٹیٹ آف دی آرٹ ادارہ‘ بن جانا نہایت قابل تحسین ہے۔ اس طرح کے خیراتی اداروں کا معاشرے بالخصوص مخیر حضرات کو دل کھول کر ساتھ دینا چاہئے۔ نادار مریضوں کے علاج کے لئے اس طرح کے ادارے غنیمت ہیں جو حکومتی مدد کے بغیر عوام کی خدمت کے لئے میدان میں آئے ہیں۔ انہوں نے زیابیطس مرکز کے ڈاکٹروں اور عملہ کے جذبہ اور خدمات کی تعریف کی۔ انہوں نے زیابیطس مرکز کے چئیرمین بورڈ آف ڈائریکٹرز ڈاکٹر اسجد حمید، ڈائریکٹر طاہر عباسی، چیف ایگزیکٹو آفیسر نوید حمید اور ڈائریکٹر محمد عمر کمال کی خدمات کو سراہا۔ قبل ازیں مشیر وزیراعظم نے زیابیطس مرکز کے مختلف شعبہ جات دیکھے اور وہاں فراہم کردہ سہولیات کا جائزہ لیا۔