ذیابیطس ٹائپ ٹو  کیوں ہوجاتی ہے؟

ذیابیطس کی تمام اقسام  دو طرح کے  عوامل یکجا ہونے سے پید اہوتی ہیں

۔ وراثت

۔ ماحولیاتی اثرات

اگر آپ کے والدین بہن بھائیوں یا خون کے رشتوں میں ذیابیطس کا سلسلہ موجودہے تو آپکے لئے ذیابیطس کا خطرہ زیادہ ہے۔ تاہم یاد رکھنا چاہئے کہ جنوبی ایشیا کے افراد میں (جن میں پاکستان بھی شامل ہےذیابیطس قسم دوم کا خطرہ ویسے ہی ذیادہ ہے۔ یعنی ہم کہہ سکتے ہیں اگر ہمارے خون کے رشتوں میں ذیابیطس کا سلسلہ پہلے سے موجود نہ ہو، تب بھی ہمارے لئے ذیابیطس ٹائپ ٹو ہونے کا خطرہ دوسری اقوام کی نسبت زیادہ ہے۔

 ذیابیطس ٹائپ ٹو کی وجوہات کو سمجھانے کی غرض سےہم دو حصوں میں تقسیم کر سکتے ہیں۔

ایک-   وہ وجوہات جن پر آپکا اختیار نہیں ہے مثال کے طور پر

وراثت

عمر 45 برس سے زیادہ ہونا

بلڈ پریشر کا ذیادہ ہونا

خون میں چربی کے تناسب کی بعض خرابیاں

دوسری-   ایسی وجوہات جو آپکے اختیار میں ہیں مثال کے طور پر

وزن کی ذیادتی، خاص طور سے پیٹ کا بڑھنا

ورزش اور جسمانی مشقت کی کمی

یہاں یہ بات واضح ہے کہ اگر آپ متوازن غذا استعمال كرتے ہیں

 تهوڑی بہت جسمانی مشقت یا ورزش بهی كرتے ہیں اور آپكا وزن صحتمند حد كے اندر ہے تو طاقتور موروثی اثرات كے باوجود آپكو ذیابطیس ٹائپ ٹو ہونے کے خطرے میں كافی كمی واقع ہو سكتی ہے۔